خود کو ترے معیار سے گھٹ کر نہیں دیکھا

خود کو ترے معیار سے گھٹ کر نہیں دیکھا
جو چھوڑ گیا اس کو پلٹ کر نہیں دیکھا

میری طرح تو نے شب ہجراں نہیں کاٹی
میری طرح اس تیغ پہ کٹ کر نہیں دیکھا

تو دشنۂ نفرت ہی کو لہراتا رہا ہے
تو نے کبھی دشمن سے لپٹ کر نہیں دیکھا

تھے کوچۂ جاناں سے پرے بھی کئی منظر
دل نے کبھی اس راہ سے ہٹ کر نہیں دیکھا

اب یاد نہیں مجھ کو فرازؔ اپنا بھی پیکر
جس روز سے بکھرا ہوں سمٹ کر نہیں دیکھا

The Author

Syeda Ume Habiba

Syeda Ume Habiba loves to write about poetry and novels. She posts her poetry from selected poets and novels on social media.

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

The 9 News © 2020 About Us | Frontier Theme